Saturday , December 3 2022

زیادہ تر لوگ سونف کو غلط طریقے سے استعمال کرتے ہیں ۔۔ سونف کے استعمال کا صحیح طریقہ اور حیرت انگیز فوائد

سونف ایک نہایت ہی خوشبودار، ذائقے دار اور غذائیت سے بھرپور بیج ہے

جس کو بچے اور بڑے سب ہی شوق سے کھاتے ہیں،

لیکن اکثر لوگ اس کا استعمال صرف کھانوں میں یا سپاری میں کرتے ہیں

مگر اس کے اصل استعمال یا پھر صحیح طریقہ استعمال

سے واقف نہیں ہیں۔کے فوڈ کے مطابق سونف ہمارے لئے قدرت کی طرف سے ایک بہترین تحفہ ہے

اوراس کے استعمال سے بڑی سے بڑی بیماریاں بھی حل ہو جاتی ہیں

کیونکہ سونف غذائیت سے بھرپور ہوتی ہے،

آج ہم آپ کو بتائیں گے سونف کے چند حیرت انگیز فوائد

اور اس کا صحیح طریقہ استعمال جو جان کر آپ بھی اپنے کئی مسائل سے چھٹکارا حاصل کر سکیں گے۔

سونف ایک حیرت انگیز سوتھنگ ایجنٹ ہے سونف یا

سونف کے پانی میں کچھ ایسے منرلز پائے جاتے ہیں جو انسانی دماغ کو سکون پہنچاتے ہیں

اور اس کا استعمال پُرسکون نیند کا باعث بنتا ہے،

رات کو سونے سے پہلے سونف کا پانی یا چائے پینے سے انسان صحت مند ریتا ہے۔

سونف فائبر سے بھرپور ہوتی ہے یہی وجہ ہے

کہ اس کے استعمال سے نظامِ ہاضمہ میں کوئی دشواری کا سامنا نہیں ہوتا

یہ انسان کے جسم میں نظامِ ہاضمہ کو بہتر بناتی ہے اور اس سے وزن میں کمی آتی ہے۔سونف

اور الائچی کو رنگت صاف کرنے اور رنگت نکھارنے کے لئے بھی استعمال کیا جاتا ہے

سونف معدہ کی گرمی ختم کرتی ہے جس سے چہرے پر دانے نہیں نکلتے

جبکہ الائچی اور سونف رنگت کو نکھارنے میں بھی مددگار ثابت ہوتے ہیں۔

سونف کا استعمال میٹابولزم کو بڑھاتا ہے، نظامِ ہاضمہ کو تیز کرتا ہے اور اس کی وجہ سے وزن تیزی سے گھٹتا ہے

، یہ جسم کی اضافی چربی کو پگھلا کر جسم کو دبلا بناتی ہے

اور آپ کی قوتِ مدافعت میں بھی اضافہ کرتی ہے، ساتھ ہی سونف کی چائے پینے کا سب سے بڑا فائدہ یہ ہے

کہ اس کو پی کا بھوک کا احساس کم ہوتا ہے اور ایسا لگتا ہے کہ جیسے آپ کا پیٹ بھرا ہوا ہے۔

آپ نے دو لیٹر پانی میں دو چمچ سونف، تین عدد سبز الائچی اور تقریباً دس گرام گڑ ڈال کر پانی کو اُبال لیں،

جب ایک اُبال آجائے تو آنچ ہلکی کر دیں اور ڈھکن کو بند کرکے پانی کو آدھا ہونے تک پکنے دیں

اس ایک لیٹر پانی کو دن میں دو بار استعمال کریں۔ اگر ہائی بلڈپریشر

کے مریض ہیں تو سونف کا استعمال نہ کریں، اس کے علاوہ پریگننسی کے دوران سونف کا استعمال خطرناک ہو سکتا ہے

اس لیے اس سے پرہیز کریں اور ایسے مریض جو مرگی میں مبتلا ہیں وہ بھی سونف کے استعمال سے گریز کریں۔

About Arslan Sohail

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *